Heart Touching Quotes In Urdu

Heart Touching Quotes In Urdu

Afreen tujhpe tera bhool Jana




Afree’n Tujh Pe Tera Bhool Jaana Akser,
Afree’n Mujh Pe Teri Hee Yaad Musalsal



آفریں تجھ پہ تیرا بھول جانا اکثر

آفریں مجھ پہ تیری ہی یاد مسلسل




غم دنیا بھی غم یار میں




Gham e Duniya Bhi Gham e Yaar Mein Shamil Karlo,

Nasha Barhta Hai Sharabein Jo Sharabon Mein Milein

غم دنیا بھی غم یار میں شامل کر لو
ہ بڑھتا ہے شرابیں جو شرابوں میں ملیں





دشمنوں کے ساتھ





Dushmanon Ke Sath Mere Dost Bhi Azad Hain

Dekhna Hai Khinchta Hai Mujh Per Phely Teer Kon




دشمنوں کے ساتھ میرے دوست بھی آزاد ہیں



دیکھنا ہے کھینچتا ہے مجھ پہ پہلا تیر کون







کون کہتا ہے کے موت آے گی








Kon Kehta Hai K Maut Aayegi Aur Main Mar Jaoonga

Main To Dariya Hoon Samandar Main Uttr Jaoonga


کون کہتا ہے کے موت آے گی اور میں مر جاوّں گا

میں تو دریا ہوں سمندر میں اُتّر جاوّں گا




لوگ اگر یونہی کمیاں نَکالتے رہے تو




Log Agar Yun Hi Kamiyan Nikalte Rahe Toh,

Ek Din Sirf Khubiyan Hi Reh Jayengi Mujh Mein




لوگ اگر یونہی کمیاں نَکالتے رہے تو

اک دن صرف خوبیاں ہی رہ جا ئینگی مجھ میں



کمسنی میں بہت شریر تھی وہ





Kamsani Mein Bahut Shareer Thi Woh

Ab Toh Shetaan Ho Gayi Hogi

کمسنی میں بہت شریر تھی وہ

 تو شیطان ہو گئی ہوگی









Jaane Kahan Base Gi Tu,

Jaane Kahan Rahunga Main

جانے کہاں بسے گی تُو

جانے کہاں رہوں گا میں



حُسن یوسف جیسا ہو






Husn Yousuf Jaisa Ho Ya Surat Bilal Jaisi,
Ishq Agar Rooh Se Ho Toh Har Roop Kamal Hota Hai


حُسن یوسف جیسا ہو یا صورت بلال جیسی

شق اگر روح سے ہو تو ہر روپ کمال ہوتا ہے



چار دن میرے ساتھ 





Char Din Mere Sath Kheli Hai,
Zindagi Hee Meri Saheli Hai

چار دن میرے ساتھ کھیلی ہے

ندگی ہی میری سہیلی ہے




یک وہ خود ہے شاعری جیسی 







Aik Woh Khud Hai Shayari Jaisi,
Aur Phir Shayari Bhi Karti Hai

ایک وہ خود ہے شاعری جیسی 
اور پھر شاعری بھی کرتی ہے





کوئی امّید بر نہیں آتی










Koi Umeed Bhar Nahi Aati
Koi Surat Nazar Nahi Aati

کوئی امّید بر نہیں آتی
 صورت نظر نہیں آتی

There is no hope to be found
There is no resolution to be sought

Maut Ka Aik Din Mo-ayeeyan Hai
Neend Kyun Raat Bhar Nahi Ati

موت کا ایک دن معین ھے
نیند کیوں رات بھر نہیں آتی؟

Death is destined to arrive one day
But why does sleep fail to come all night

Aagey Aati Thi Haal e Dil Pe Hansee
Ab Kisi Baat Per Nahi Ati

آگے آتی تھی حال دل پہ ہنسی
اب کسی بات پر نہیں آتی

Once I was able to laugh at the predicament of my heart
Now I am unable to laugh at anything

Jaanta Hoon Sawab-e-Teyat-o-Zohad
Per Tabiyat Udher Nahi Ati

جانتا ہوں ثوابِ طاعت و زہد
پر طبعیت ادھر نہیں آتی

Though I am aware of the rewards of prayer and virtue
But I am prohibited by my disposition

Hai Kuch Aesi Hee Baat Jo Chup Hoon
Warna Kiya Baat Ker Nahi Aati

ہے کچھ ایسی ہی بات جو چپ ہوں
ورنہ کیا بات کر نہیں آتی

This matter is such that I am prevented from speaking of it
Otherwise what is there that I cannot speak of

Kyun Na Cheekhon ke Yaad Kartay Hain
Meri Awaaz Gar Nahi Aati

کیوں نہ چیخوں کہ یاد کرتے ہیں
میری آواز گر نہیں آتی

Why shouldn’t I shout for I reminisce
Yet my voice fails to produce any sound

Daag-e-dil Gar Nazar Nahi Aata
Boo Bhi Ae Chaaraa-Gar Nahi Aati

داغِ دل گر نظر نہیں آتا
بو بھی اے چارہ گر نہیں آتی

Though the wound of my heart cannot be seen
but my healer, even a trace of its smoldering is missing

Hum Wahan Hain Jahan say Hum Ko Bhi
Kuch Hamari Khabar Nahi Aati

ہم وہاں ہیں جہاں سے ہم کو بھی
کچھ ہماری خبر نہیں آتی

I am in such a state, from where even I am
Unable to get any news of myself

Marte Hain Arzoo Mein Marne Ki
Maut Aati Hai Per Nahi Aati

مرتے ہیں آرزو میں مرنے کی




موت آتی ہے پر نہیں آتی

I am dying of impatience in hope of death
Death appears,yet fails to arrive

Kaba Kis Moun Se Jao Ge Ghalib
Sharam Tum Ko Magar Nahi Aati

کعبہ کس منہ سے جاؤ گے غالبؔ

شرم تم کو مگر نہیں آتی

How will you go to Kaaba, O Ghalib!
You do not bear any shame!







کاش کوئی تو ایسا ہو   





Kaash Koi Toh Aesa Ho,
Jo Ander Se Bahar Jaisa Ho

کاش کوئی تو ایسا 
جو اندر سے باہر جیسا ہو



روششہر سے متاثر





Roshan Sheher Se Mutasir Na Kar,
Main Hasee’n Veerane Mein Hun

Haqeeqat Pe Meri Nazar Na Kar,
Main Kitaabi Afsane Mein Hun


،روشن

شہر سے متاثر نہ کر
میں حسیں ویرانے میں ہوں
،حقیقت پہ میری نظر نہ کر
میں کتابی افسانے میں ہوں




  مرد بنو جسے عورت چاہے






Woh Mard Bano Jissey Aurat Chahe,
Woh Nahi Jissey Aurat Chaiye

  مرد
  بنو جسے عورت چاہے

وہ نہیں جسے عورت چاہیے


Waha bhi Teri hi arzoo ho gi



Wahan Bhi Teri Hee Arzoo Hogi,
Jahan Suna Hai Bahut C Hoorein Hoti Hain







Dua To Deta ha








Dua Toh Deta Hai Mera Raqeeb Bhi Lekin,
Dua K Ain Pe Nuqta Laga K Deta Hai







Ishq ka ek hi ward ha


Ishq Ka Aik Hee Dard Hai,
Ishq Mashooq K Gird Hai







Shairoon sa taaluk




Shayaron Se Taluq Rakho, Tabiyat Theek Rahegi,
Yeh Woh Hakeem Hain Jo Lafzon Se Ilaaj Karte Hain






Sunat bhi Ada ho gi


Sunnat Bhi Adaa Hogi,
 Farz Bhi Adaa Hoga,

Woh Kya Samaa Hoga Jab 
Hum Dono Ka Nikaah Hoga

Meri nigah e muhabbat


Meri Nigah e Mohabbat 
Ka Intikhab Ho Tum,

Chaman Mein Phool Bahut
 Hain Magar Gulab Ho Tum






Chalo uska nahi khuda ka







Chalo Uss Ka Nahi Allah
Ka Ehsaan Lete Hain,

Woh Minat Se Nahi Maana 
Toh Mante Maan Lete Hain

Fitoor hota ha


Fitoor Hota Hai Har 
Umar Mein Juda Juda,

Khilona, Ishq, Paisa Aur 
Phir Khuda Khuda

فتتور ہوتا ہے ہر عمر میں جدا جدا
کھلونا ، عشق ، پیسہ اور پھر خدا خدا



Ae musawir tujhy ustad




Ae Musawar Tujhe Ustad Main Maanu Ga,
Dard Bhi Kainch Meri Tasveer K Saath





Hum koi yousafsani




Hum Koi Yousaf Saani 
Toh Nahi Hain Phir Bhi,

Jaa Baja Sheher Mein 
Bazaar Se Lag Jaate Hain









Zindagi ki mahfil main



Zindagi Ki Mehfil Mein 
Jab Sabr Aata Hai,

Toh Beshumaar Gunaah 
Uth K Chale Jaate Hain








  Main usy chahta to hun



Ma usy chahta to hun
Magar Ehtram-e-Izhaar Nahi Kar Sakta

Mai Tere Is Badan Ko
Mohabbat Ka Naam De Kar 
Aludah Nahi Kar Sakta

Jitna Bhi Kamiyab Ho Jaye
Ab Murshid Ka Mukabla Tou Nahi Kar Sakta

Ali Ko Janne K Lie Bhi Ali Chahiye
Ab Har Shaks Bhi Tou Ali Ali Nahi Kar Sakta

Mai Yazeed Ka Sath De Kar
Aal-Muhammad Se Daga Nahi Kar Sakta


میں اسے چاہتا تو ہوں

مگر احترام اظہار نہیں کر سکتا

میں تیرے اس بدن کو

محبت کا نام دے کر آلودہ نہیں کر سکتا

مرید جتنا بھی کامیاب ہو جاۓ

اب مرشد کا مقابلہ تو نہیں کر سکتا

علی کو جاننے کیلۓ بھی علی چاہیۓ

اب ہر شخص بھی تو علی علی نہیں کر سکتا

میں یزید کا ساتھ دے کر

آل محمد سے دغا نہیں کر سکتا





Log akar kr esa jeety




Log Akar Kar Aese Jeete Hain,
Jaise Aab e Hayat Peete Hain

لوگاکڑ کر ایسے جیتے ہیں
جیسے آبِ حیات پیتے ہیں


Nafratoon k tere kha ker






Nafraton Ke Teer Khaa Kar, 
Dosto’n Ke Sheher Mein,

Hum Ne Kis Kis Ko Pukaara, 
Yeh Kahani Phir Sahee

نفرتوں کے تیر کھا کر، دوستوں کے شہر میں
ہم نے کس کس کو پکارا، یہ کہانی پھر سہی



Mai Kade Band Kardein Lakh Zamane Wale,
Sheher Mein Kam Nahi Aankhon Se Pilane Wale
مئے کدے بند کریں لاکھ زمانے والے
شہر میں کم نہیں آنکھوں سے پلانے والے



Adaa Katil, Bayaa’n Katil, Zuba’n Katil, Nigah Katil,
Tumhara Silsila Shayad Kisi Katil Se Milta Hai
ادا قاتل، بیاں قاتل، زباں قاتل، نگاہ قاتل
تمہارا سلسلہ شاید کسی قاتل سے ملتا ہے



Mulaim Hath, Kham e Zulf, Ada e Nain Aur Yaqoot Hont,




Wallah Katal Baaqi Hai Auzaar Toh Sab Hee Pooray Hain
ملائم ہاتھ ، خمِ زُلف ، ادائے نین اور یاقوت ہونٹ
واللہ قتل باقی ہے اوزار تو سب ہی پورے ہیں



Hoti Hain Kayi Nazrein Dil Ko Choone Wali,
Har Nazar Bhi Nazar Andaz Nahi Hoti
ہوتی ہیں کئی نظریں دل کو چُھونا والی
ہر نظر بھی نظر انداز نہیں ہوتی




Woh Jo Kehta Tha Ishq Mein Kya Rakha

Hai,
Ek Heer Ne Ussey Ranjha Bana Rakha Hai
وہ جو کہتا تھا عشق میں کیا رکھا ہے
اک ہیر نے اُسے رانجھا بنا رکھا ہے




Tareekh Mein Qissay Toh Husn e Yousuf Ke Hain,
Phir Yeh Bint e Hawa Kis Baat Pe Itrati Hai
تاریخ میں قصے تو حسنِ یوسف کے ہیں
پھر یہ بنتِ حوا کس بات پہ اتراتی ہے





Quwat e Ishq Se Har Past Ko Bala Kar De,
Dehr Mein Ism e Muhammad ( S.A.W ) Se Ujala Kar De
قوتِ عشق سے ہر پست کو بالا کردے
دہر میں اسمِ محمدؑ سے اُجالا کردے








Rangon Se Darr Nahi Lagta Sahab,

Rang Badalne Walon Se Lagta Hai

رنگوں سے ڈر نہیں لگتا صاحب

رنگ بدلنے والوں سے لگتا ہے




Waqt Jab Bhi Laut Kar Aata Hai,
Ya Toh Imtihan Leta Hai Ya Inteqam
وقت جب بھی لوٹ کر آتا ہے
یا تو امتحان لیتا ہے یا انتقام




Khud Ko Bawazu Kiya Tere Tasawar Se Bhi Pehle,
Maine Iss Darje Tere Ishq Ko Pakeeza Rakha
خود کو باوضو کیا تیرے تصور سے بھی پہلے
میں نے اس درجہ تیرے عشق کو پاکیزہ رکھا





Mohabbat Karne Walon Se Tu Maange Saron Ki Bali,
Arey Ishq Kuch Khayal Kar Yeh Toh Rasm Hai Kafirana
محبت کرنے والوں سے مانگے تُو سرَوں کی بَلیِ
ارے عشق کچھ خیال کر یہ تو رسم ہے کافرانہ





Na Zameen Apni Na Aasman Apna,
Duniya Mein Nahi Koi Maqam Apna
نہ زمین اپنی نہ آسمان اپنا
دنیا میں نہیں کوئی مقام اپنا








Tum Kya Jaano Mohabbat Ke Meem Ka Matlab,
Agar Mil Jaye Toh Mojza Na Mile Toh Maut
تم کیا جانو محبت کے ’ م ‘ کا مطلب
اگر مل جائے تو معجزہ نہ ملے تو موت




Husn Ka Kya Kaam , Sachi Mohabbat Mein,
Aankh Majnu Ho Toh, Har Laila Haseen Lagti Hai
حُسن کا کیا کام سچی محبت میں
آنکھ مجنوں ہو تو ہر لیلیٰ حسین لگتی ہے




Hazaron Gham Hain Lekin Aankh Se Tapka Nahi Aansu,
Hum Ahl e Zarf Hain Peete Hain Chalkaya Nahi Karte
ہزاروں غم ہیں لیکن آنکھ سے ٹپکا نہیں آنسو
ہم اہلِ ظرف ہیں پیتے ہیں چھلکایا نہیں کرتے




Tum Qayamat Ka Naam Doh Ge Issey,
Waqt Apni Thakan Utaare Ga
تم قیامت کا نام دو گے اِسے
وقت اپنی تھکن اتارے گا




Halaat Ke Kadmon Mein Qalandar Nahi Girta
Tute Bhi Jo Taara Toh Zamee’n Per Nahi Girta,
Girte Hain Samundar Mein Bare Shauk Se Dariya
Lekin Kisi Dariya Mein Samundar Nahi Girta
حالات کے قدموں میں قلندر نہیں گرتا
ٹوٹے بھی جو تارا تو زمیں پر نہیں گرتا
گرتے ہیں سمندر میں بڑے شوق سے دریا
لیکن کسی دریا میں سمندر نہیں گرتا






Tennu Saade Wargi Nahi Charni,
Asaa’n Yaar Dee Akh Chon Peeti Ae
تینوں ساڈے ورگی نئیں چڑھنی
اساں یار دی اکھ چوں پیتی اے







Saanu Ilm Ae,
Ae Duniya Film Ae
سانُو عِلم اے
اے دُنیا فِلم اے








Woh Mile Bhi Toh Faqat Khuda Ke Darbar Mein,
Ab Tum Hee Batao Ibadat Karte Ya Mohabbat
وہ ملے بھی تو فقط خدا کے دربار میں
اب تم ہی بتاؤ عبادت کرتے یا محبت



Khud Se Jeetne Ki Zid Hai Mujhe Khud Ko Hee Harana Hai,
Main Bhir Nahi Hun Duniya Ki Mere Ander Aik Zamana Hai



Daad Milti Hai Dard Suna Kar,
Ajab Hunar Hai Shayari Bhi







Uski Aankhen Sawal Karti Hain,
Aur Meri Himmat Jawab De Jaati Hai





Main Bura Kaise Ho Gaya Sahab,
Dard Likhta Hun Kisi Ko Deta Toh Nahi










Hum Abhi Haroof e Tahaji Bhi Nahi Parh Sakte,
Aur Tumhari Aankhen Hain Riyazi Ke Sawalon Jaisi




Qayamat Hai Zalim Ki Neechi Nigahein,
Khuda Jaane Kya Ho Jo Nazrein Utha Lein



Nahi Hote Bardasht ‘ Tum ‘ Per 2 Nukte,
Tab Hee Toh Kehta Hun ‘ Hum ‘ Ho Jayein



Yani Ab Log Seekhaein Ge Main Kaise Dekhun,
Meri Marzi Main Uss Shaks Ko Jaise Dekhun



Guftagu Ki Jiye Magar Ahtiyat Ke Sath,
Log Mar Jaate Hain Alfaaz Ke Sath




Zulekha Phir Tere Kadmon Mein Hogi,
Tum Yousuf Jaisa Kirdar Toh Laao



Abhi Tum Tifle Maktab Ho, Sambhalo Apne Joban Ko,
Yeh Totey Kachi Faslon Ka Bara Nuqsan Karte Hain

0/Post a Comment/Comments

Please Do Not Enter Any Spam Link In THe Comment box.

Previous Post Next Post